Pakistan News – سپریم کورٹ نے ” دی نیوز ” کی غلط خبر کا نوٹس لے لیا , جے آئی ٹی رپورٹ شائع کرنیکا حکم

0
134
SC expected to announce judgment on Panama case on Monday
Pakistan News - Contempt of Court Notice Issued to Jang Group
Pakistan News – Contempt of Court Notice Issued to Jang Group

غلط خبر پر سپریم کورٹ کا اظہار برہمی ، جنگ گروپ کے مالک میر شکیل الرحمان اور رپورٹر احمد نورانی کو نوٹس جاری

اسلام آباد (دنیا نیوز ) غلط رپورٹنگ پر سپریم کورٹ کا اظہار برہمی ، سپریم کورٹ نے دی نیوز کی خبر کا نوٹس لے لیا ۔ سپریم کورٹ نے میر شکیل الرحمان اور رپورٹر احمد نورانی کو نوٹس جاری کر دیا ۔ عدالت کا کہنا تھا کہ کیوں نہ اس معاملے میں توہین عدالت کی کارروائی کی جائے ۔ عدالت نے رپورٹر اور ادارے کے مالک کو حکم دیا ہے کہ سات دن کے اندر اندر جواب دیا جائے ۔

عدالت نے غلط رپورٹنگ پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے سوال کیا دی نیوز اخبار کا رپورٹر کون ہے؟ تسلسل کیساتھ غلط رپورٹنگ کی جا رہی ہے ۔ جنگ گروپ نےحسین نواز کی درخواست مسترد ہونے کی غلط خبر لگائی ۔ جسٹس اعجاز نے کہا ہم نے حسین نواز کی کوئی درخواست مسترد نہیں کی ، رپورٹر احمد نورانی نے عدالت کے جج کو کیسے فون کیا ، صحافی جج سے کیسے رابطہ کر سکتا ہے ، یہ براہ راست توہین عدالت ہے ۔

عدالت نے میر شکیل الرحمان اور رپورٹر احمد نورانی کو نوٹس جاری کرتے ہوئے کہا کیوں نہ ان کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے ، عدالت نے دونوں سے 7 روز میں جواب طلب کرلیا ہے ۔ دوسری جانب سپریم کورٹ نے جے آئی ٹی رپورٹ پبلک کرنے کا حکم دیدیا ہے ۔ عدالت کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی ارکان کے خلاف عدالت کی منظوری کے بغیر کوئی قدم نہ اٹھایا جائے ، فریقین جے آئی ٹی کی رپورٹ پڑھ کر آئیں ، عدالت نے جے آئی ٹی کو دس دن کے اندر سیکرٹریٹ خالی کرنے کا حکم بھی دیا ۔

کیس کی سماعت کے دوران جسٹس اعجاز الاحسن نے اپنے ریمارکس میں کہا پتا چلایا جائے جے آئی ٹی ارکان کے سوشل اکاؤنٹس کس نے ہیک کیے ، فائدہ کس کو ہوا؟ آئی بی کا جواب احمقانہ ہے ۔ عدالت نے کہا جے آئی ٹی کی نگرانی کا اختیار آئی ایس آئی کو نہیں دیا ، جے آئی ٹی کے خلاف گند اچھالنا بند کیا جائے ، عدالت کی منظوری کے بغیر کوئی قدم نہ اٹھایا جائے ۔ سپریم کورٹ نے جے آئی ٹی رپورٹ کو پبلک کرنے کا حکم دیتے ہوئے فریقین سے کہا وہ آئندہ سماعت پر رپورٹ پڑھ کر آئیں ۔ سپریم کورٹ سے جے آئی ٹی نے درخواست کی رپورٹ کی جلد نمبر 10 پبلک نہ کرنے کا حکم دیا جائے ۔ عدالت نے جے آئی ٹی کو دس دن کے اندر سیکرٹریٹ خالی کرنے کا حکم بھی دیا جس پر واجد ضیا نے یقین دہانی کرائی کہ وہ عدالت عظمٰی کے احکامات پر مکمل عمل کریں گے ۔

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here