Health Tips – متوازن غذا کسے کہتے ہیں؟

0
182
What is Balance Food

روزانہ ایک طرح کی سبزی ، پھل اور کھانا کھانے سے پرہیز کرنا چاہیئے ، خوراک میں تنوع صحت کیلئے بہتر ہے

لاہور (روزنامہ دیا ) صحت مندانہ اور متوازن خوراک اچھی جسمانی اور ذہنی صحت برقرار رکھنے کے لیے لازمی ہے ۔ یہ جاننا اہم ہے کہ کیا اور کتنا کھایا اور پیا جائے ۔ اگر آپ ایسی خوراک کھا پی رہے ہیں جس میں چکنائی، نمک اور شکر زیادہ ہے تو اسے کم کیجیے اور زیادہ وقفوں کے بعد لیجیے نیز مختلف طرح کی خوراک لیجیے یعنی اس میں تنوع ہونا چاہیے ۔ پھل اور سبزیاں وٹامن اور منرلز کا انتہائی اہم وسیلہ ہیں اور انہیں روزانہ کی خوراک کا ایک تہائی یا اس سے تھوڑا زیادہ حصہ ہونا چاہیے ۔ روزانہ ایک طرح کی سبزی اور پھل نہیں لینے چاہئیں ان میں تنوع ہونا چاہیے ۔ مثلاً آدھا درجن کیلے کھانے سے بہتر ہے کہ ایک سیب ، ایک ناشپاتی اور ایک کیلا کھایا جائے ۔ نشاستہ دار خوراک کی ضرورت بھی زیادہ ہوتی ہے ۔ آلو اور گندم کے ذریعے اس کا حصول ممکن ہے۔

آلو پر سے چھلکا اتار لیا جاتا ہے لیکن اس کا چھلکا مفید ہے۔ چھلکے سمیت آلو فائبر اور وٹامن کا اچھا ذریعہ ہے۔ اسی طرح آٹا وہ کھانا چاہیے جو ’ہول گرین‘ ہو۔ براؤن رائس زیادہ بہتر ہیں، اگرچہ ہمارے ہاں ان کا استعمال کم ہے۔ فائبر سے لبریز خوراک لینی چاہیے کیونکہ فائبر کی کمی آنتوں سمیت مختلف حصوں کی بیماریوں کا باعث بنتی ہے۔ ہمارے ہاں دودھ، دہی اور لسی کا استعمال بھی خوب ہوتا ہے۔ یہ پروٹین کا اچھا ذریعہ ہیں۔ ان سے کیلشیم حاصل ہوتا ہے جو ہڈیوں کے لیے مفید ہے۔ تاہم کوشش کرنی چاہیے کہ ان میں چکنائی کی مقدار کم ہو۔ دالیں، مچھلی، انڈے اور گوشت پروٹین کا اچھا ذریعہ ہیں جو جسم کی نشوونما اوراندرونی توڑپھوڑ کی درستی کے لیے اہم ہے۔

ان سے مختلف طرح کے وٹامنز اور منرلز حاصل ہوتے ہیں۔گوشت پروٹین، منرل اور وٹامن کا اچھا ذریعہ ہے۔ اس میں فولاد، زنک اور بی وٹامنز شامل ہیں۔اس سے وٹامن بی 12 بھی ملتا ہے۔ تاہم گوشت کو اچھی طرح پکانا چاہیے ۔ مچھلی بھی پروٹین کا اہم ذریعہ ہے۔ اس سے اومیگا3 بھی حاصل ہوتا ہے۔ انڈے، دالیں، پھلیاںاور بیج بھی خوب پروٹین فراہم کرتے ہیں۔ چکنائی کا استعمال بالکل ترک نہیں کیا جاسکتا تاہم اسے معتدل ہونا چاہیے ۔ فاسٹ فوڈ میں توانائی زیادہ اور غذائیت کم ہوتی ہے اور یہ غذا موٹاپا اور کینسر کا باعث بن سکتی ہے اس لئے اپنی خوراک کو جس قدر ممکن ہو سکے قدرتی رکھیں ۔ مناسب غذائیت، مناسب مقدار، باقاعدگی اور تنوع ایک بہترین غذا کے سنہری اصول ہیں۔ انسان کے جسم کو مناسب حالت میں کام کرنے کیلئے کاربوہائیڈریٹس، چکنائی، پروٹین، وٹامن ، فائبر، منرل اور انٹی آکسیڈینٹس کی ایک خاص مقدار ضرورت ہوتی۔

ان میں کسی بھی جزو کی کمی انسان کی صحت کو متاثر کرتی ہے۔ ایک اچھی خوراک ان تمام اجزا کی جسم تک فراہمی یقینی بناتی ہے۔ غذائی ماہرین نے انسانی غذا کو مختلف گروہوں میں تقسیم کیا ہے جن میں سے ایک درجہ بندی یہ ہو سکتی ہے: 1۔ اناج 2۔ پھل اور سبزیاں 3۔ دودھ اور انڈے 4۔ دالیں اور پھلیاں 5۔ گوشت 6۔گھی اور آئل۔ روز مرہ زندگی میں باقاعدگی سے شامل وہ قدرتی غذا جس میں یہ تمام گروہ مقررہ مقدار میں شامل ہوں بہترین یا متوازن غذا کہلاتی ہے۔

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here